ہفتہ , فروری 20 2021
صفحہ اول / اسلامی معلومات / مولانا طارق جمیل سےوہ کونسی خواتین ملنے آئیں کہ جنہیں دیکھکرخاندان والے ان سے ناراض ہو گئے

مولانا طارق جمیل سےوہ کونسی خواتین ملنے آئیں کہ جنہیں دیکھکرخاندان والے ان سے ناراض ہو گئے

معروف اسلام اسکالر مولانا طارق جمیل نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ کچھ سال پہلے میں نے لاہور کے بازار حسن میں تعلیم شروع کروا دی اور بازار حسن  وہاں سے ختم ہو گیا، اس بازار حسن  کو چلانے والی جو نمبردارنی تھی جس کو عرف عام میں نائیکہ کے نام سے جانا جاتا تھا  اور جو لڑکیوں کو اس گناہ کی زندگی کے رموز سکھانے، آنے والے گاہکوں سے ڈیل کرنے اور پیسے بٹورنے کے کام کیا کرتی تھی، اس کو ساتھ ایک رقاصہ تھی جو دبئی جا کر رقص کیا کرتی تھی  ان کو جب میں نے عمرے پر بھیجا تو سارے بازار کی فضا بدل گئی، اس بازار  حسن میں کام کرنے والی 70سے 80 لڑکیوں نے توبہ کر لی اور بازار حسن چھوڑ کر اپنا گھر آباد کر لیا۔

جب یہ بات  میرے خاندان والوں کو پتہ چلی تو وہ مجھ سے ناراض ہو گئے  اور کہا کہ تمہارے گھر  میں تو کنجریوں کا آنا جانا ہو گیا ہے، مولانا طارق جمیل کے مطابق وہ ان سے ملنے آتی تھیں، جو کہ ان خاندان  کو پسند نہ تھا جس پر انہوں نے کہا یہ ہماری بےعزتی ہے۔

مولانا طارق جمیل صاحب فرماتے ہیں کہ انہوں نے وینا ملک کو صرف ایک لفظ بیٹی کہا تھا اور وہ اسی ایک لفظ پر  ہی ڈھیر ہو گئیں۔ مولانا طارق جمیل کا کہنا تھا کہ مجھے اہل علم سے گلہ ہے کہ جو معاشرت سے متعلق اسلامی احکامات سے لوگوں کو آگاہ نہیں کرتے۔

About اردوباز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.