بابر اعظم پر جنسی تعلق کا الزام لگانے والی حامزہ مختار پر مبینہ قاتلانہ حملہ

قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم کے ساتھ دس سال جنسی تعلق رکھنے کا الزام لگانے والی حامیزہ مختار پر مبینہ طور پر قاتلانہ حملہ ہوا ہے تاہم انہیں اس حملے میں کوئ نقصان نہیں پہنچا۔

مقامی ویب سائٹ کا کہنا ہے کہ حامیزہ مختار پر حملہ اس وقت ہوا جب وہ کاہنہ میں موجود ایک پراپرٹی ڈیلر سے مل کر واپس آرہی تھیں۔ حامزہ کے مطابق موٹر سائیکل پر سوار 2 لڑکوں نے ان کا پیچھا کیا اور جیسے ہی ان کی گاڑی تھوڑی آہستہ ہوئی تو ان لڑکوں نے ان کی گاڑی پر گولیاں چلا دیں۔ اتوار کی صبح تقریبا 8 بجے حامزہ کی گاڑی پر 2 نامعلوم لڑکوں نے 4 فائر کیے۔

حامزہ کا کہنا ہے کہ لڑکوں نے گاڑی کے آہستہ ہونے پر پہلے ان کو گالیاں دیں اور کہا کہ تم گاڑی کس طرح چلا رہی ہو۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ جب وہ جائے وقوعہ پر پہنچے تو حامزہ اپنی گاڑی میں بیٹھی تھیں اور رو رہی تھیں، جس کے بعد پولیس کو اطلاع کی گئی۔ خاتون کی گاڑی پر گولیاں لگنے کے 3 نشانات پائے ہیں۔ اس کے بعد حامزہ مختار نے خود پر ہونے والے اس قاتلانہ حملے کے خلاف درخواست تھانہ کاہنہ میں جمع کروا دی۔

مبینہ حملے کے بعد ان کا ایک ویڈیو بیان بھی سامنے ایا ہے جس میں حامزہ مختار کا کہنا ہے کہ وہ پہلے بھی پولیس سے تحفظ دینے کی مانگ کرچکی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.